May 9, 2008

میری ایک رباعی

شکوہ بھی لبوں پر نہیں آتا ہمدَم
آنکھیں بھی رہتی ہیں اکثر بے نَم
مردم کُش یوں ہوا زمانے کا چلن
اب دل بھی دھڑکتا ہے شاید کم کم

متعلقہ تحاریر : رباعی, محمد وارث, میری شاعری

2 comments: